گمشدہ تسمانیہ ٹائیگر کی باقیات آسٹریلوی میوزیم سے مل گئیں


85 سال سے گمشدہ آخری تسمانیہ ٹائیگر کی باقیات آسٹریلوی میوزیم کی الماری سے مل گئیں۔

1936 میں ہوبارٹ چڑیا گھر میں مرنے والےآخری تسمانیہ ٹائیگر کی لاش مقامی میوزیم کو دی گئی تھی لیکن بعد میں تسمانیہ میوزیم اور آرٹ گیلری میں ٹائیگر کی باقیات کا کچھ پتا نہ چلا اور تسمانیہ ٹائیگر کے ڈھانچے اور کھال کی گمشدگی ایک معمہ بن گئی۔

خیال تھا کہ اسے پھینک دیا گیا ہے لیکن نئی تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ تسمانیہ ٹائیگر کی باقیات وہیں موجود اور محفوظ تھیں، لیکن اسے مناسب طریقے سے تفصیلی فہرست میں شامل نہیں کیا گیا تھا۔




Source link

About admin

Check Also

کھلاڑی کے چہرے میں دوسرے کے دانت پیوست، 6 دن لیے گھومتا رہا

ایک چینی شہری یہ جان کر حیرات رہ گیا کہ دو انسانی دانت اس کے …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *